’میرے بچے کی عمر ایک سال سے زائد ہوگئی ہے لیکن ابھی تک اس کی جنس اور نام کے بارے میں کسی کو نہیں بتاتی کیونکہ میں چاہتی ہوں کہ وہ خود۔۔۔‘ معروف گلوکارہ نے ایسی بات کہہ دی کہ جان کر ہر کسی کا منہ حیرت کے مارے کھلا کا کھلا رہ جائے

 مغربی معاشروں میں ہم جنس پرستی و دیگر خباثتوں کے ساتھ ساتھ جنس تبدیلی کا شرمناک رجحان بھی عروج کو پہنچ چکا ہے اور سرجری کے ذریعے مردوں کے خواتین اور خواتین کے مرد بننے کے واقعات بکثرت نظر آتے ہیں۔ اب معروف برطانوی گلوکارہ نے ایک قدم آگے بڑھاتے ہوئے اس حوالے سے اپنے بیٹے کے متعلق ایسی بات کہہ دی ہے کہ آپ سن کر ششدر رہ جائیں گے۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 36سالہ گلوکارہ پیلوما فیتھ کا کہنا ہے کہ ’’میرا بیٹا ایک سال کا ہو گیا ہے لیکن میں نے اب تک اس کی جنس اور نام لوگوں سے خفیہ رکھا ہوا ہے کیونکہ میں چاہتی ہوں کہ وہ بڑا ہو کر خود اپنی جنس کا تعین کرے کہ وہ مرد بننا چاہتا ہے یا عورت۔ میں نہیں چاہتی کہ میں ابھی سے اس کی جنس کا فیصلہ کر دوں اور وہ اپنے مرد یا عورت ہونے کے احساس کے ساتھ بڑا ہو۔‘‘

’یو‘ میگزین کو انٹرویو دیتے ہوئے پیلوما کا کہنا تھا کہ ’’اگر میں لوگوں کواس کی جنس اور نام بتا دوں تو جوان ہونے تک اس میں یہ احساس راسخ ہو جائے گا کہ وہ مرد ہے۔ پھر اسے اپنی جنس کا خود تعین کرنے اور اس میں تبدیلی لانے میں شدید مشکل درپیش آئے گی۔میرے خیال میں ہر ایک کو حق ہونا چاہیے کہ وہ جو کچھ بننا چاہتا ہے بنے۔ اس کی شناخت چھپانے کا ایک مقصد یہ بھی ہے کہ وہ ایک معروف گلوکارہ کا بیٹا بن کر زندگی نہ گزارے۔میں چاہتی ہوں کہ میرا بیٹا مہنگے سکولوں کی بجائے نارمل سکولوں میں جائے اور وہاں ہر طرح کے طبقات سے آنے والے بچوں کے ساتھ انہی کی طرح رہے۔ نہ وہ بچے اسے بڑی شخصیت کا بیٹا سمجھ کراعلیٰ مخلوق سمجھیں اور نہ میرا بیٹا خود کو ان سے افضل گردانے۔‘‘

میاں بیوی کی علیحدگی، بیگم چھوڑ کر چلی گئی لیکن پھر ایک دن شوہر کو گھر کی دیوار پر ایسی چیز لگی نظر آگئی کہ زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا، بیگم کیا لگا کر گئی تھی؟ کوئی شوہر کبھی تصور بھی نہیں کر سکتا

میاں بیوی کی لڑائی ہو جائے تو عموماً بیوی چپکے چپکے آنسو بہاتی اپنے والدین کے گھر کی راہ لیتی ہے لیکن برطانیہ میں ایک خاتون اپنے میاں سے لڑکر رخصت ہوئی تو جاتے جاتے اس کے کمرے میں ایک ننھا سا خفیہ جاسوس بھی چھوڑ گئی۔میل آن لائن کے مطابق ڈونلڈ میک انٹائر نامی شخص کا کہنا ہے کہ بیگم کے روٹھ کر جانے کے کچھ دن بعد اسے اپنے کمرے کی دیوار پر لگے کوٹ ہینگر پر کچھ شک پڑا تو اس کے معائنے کا فیصلہ کیا۔

تب یہ انکشاف سامنے آیا کہ یہ کوٹ ہینگر دارصل ایک خفیہ کیمرہ تھا جو بڑی نفاست سے ہینگر کی شکل میں بنایا گیا تھا۔ اس ڈیوائس کے اوپری حصے پر ایک باریک سوراخ تھا جس کے پیچھے ایک کیمرہ تھا جبکہ اس کے اندر ڈیٹا ریکارڈ کرنے کے لئے ایک چپ بھی موجود تھی۔

یہ انکشاف سامنے آتے ہیں ڈیوڈ نے پولیس کو اطلاع کر دی اور اس کی اہلیہ امیرہ میک انٹائر کو حراست میں لے لیا گیا۔ تفتیش کے دوران معلوم ہوا کہ اس کیمرے کو ویب سائٹ ایمزون سے خریدا گیا تھا اور اس مقصد کے لئے امیرہ کا کریڈٹ کارڈ استعمال ہوا تھا۔خاتون کے زیر استعمال کمپیوٹر بھی قبضے میں لے لیا گیا ہے جبکہ یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ اس کے پاس سے کوکین بھی برآمد ہوئی ہے۔ مزید تحقیقات جاری ہیں جبکہ پولیس کا کہنا ہے کہ تمام شواہد اکٹھے کرنے کے بعد معاملہ عدالت کے سامنے پیش کیا جایا جائے گا۔

گائے نے بچے کو جنم دے دیا، لیکن یہ بچھڑا نہ تھا بلکہ۔۔۔ حاملہ گائے کے جسم سے ایسا جانور نکل آیا کہ پوری دنیا سے لوگ دیکھنے کے لئے جمع ہونے لگے

)گائے کا بچہ بچھڑا ہو گا یا بچھڑی، کچھ اور تو ممکن نہیں؟ یقیناً آپ بھی کہیں گے کہ یہ کیسا احمقانہ سوال ہے، لیکن ذرا ٹھہریے، پہلے انڈونیشیا کے اس کسان کی بات تو سن لیجئے۔ یہ صاحب ریمین نگاڈو ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ ان کی گائے نے ایک کچھوے کو جنم دیا ہے۔ صرف نگاڈو ہی نہیں بلکہ اس کا سارا گاؤں کہہ رہا ہے کہ یہ واقعہ پیش آچکا ہے، اور جناب دور، دور سے دنیا اس عجوبے کو دیکھنے کے لئے اس کسان کے گھر پہنچ رہی ہے۔

گائے نے بچے کو جنم دے دیا، لیکن یہ بچھڑا نہ تھا بلکہ۔۔۔ حاملہ گائے کے جسم سے ایسا جانور نکل آیا کہ پوری دنیا سے لوگ دیکھنے کے لئے جمع ہونے لگے

نیوز ویب سائٹ ڈیلی سٹار کے مطابق نگاڈو نے مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا ہے کہ اس کی گائے نے ایک صحت مند بچھڑے کو جنم دیا تو وہ بہت خوش ہوئے لیکن کچھ دیر بعد یہ دیکھ کر ان کے ہوش اڑ گئے کہ ان کی گائے نے ایک کچھوے کو بھی جنم دے ڈالا۔نگاڈو نے اس واقعہ کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا ’’بچھڑے کی پیدائش کے چند منٹ بعد گائے کی جسم سے ایک کچھوا باہر آگیا۔ مجھے تو یہ منظر دیکھ کر اپنی آنکھوں پر یقین نہیں آرہا تھا لیکن سچ تو یہی ہے کہ میرے سامنے ایسا ہی ہوا ہے۔

جب سے یہ واقعہ ہوا ہے میرے گھر میں تو ایک میلا لگا ہوا ہے۔ ہر کوئی اس کچھوے کو دیکھنے آ رہا ہے۔ یہ خبر عام ہونے پر کچھ سرکاری اہلکار بھی میرے گھر آئے تھے۔ انہوں نے میری گائے اور اس کچھوے کا معائنہ کیا، لیکن پھر وہ مجھے کچھ بتائے بغیر ہی چلے گئے۔‘‘

گاﺅں میں انتہائی قدیم پہاڑی جسے گاﺅں والے عام پہاڑی ہی سمجھتے رہے، لیکن دراصل یہ کیا چیز ہے؟ حقیقت ایسی کہ کسی نے سوچا بھی نہ تھا، جان کر ہر شخص خوفزدہ ہوگیا کیونکہ۔۔۔

اہرام کا جب بھی ذکر ہو تو ذہن میں مصر کا تصور ابھرتا ہے لیکن کسے معلوم تھا کہ امریکا میں بھی اہرام پائے جاتے ہیں، بلکہ حیرت کی بات یہ ہے کہ ہزاروں سال قدیم ایک ہرم کے آس پاس آباد لوگ بھی اس کی اصل حقیقت سے بے خبر تھے۔ڈیلی سٹار کے مطابق ’پیرامڈ ہل‘ نامی یہ ہرم امریکی ریاست شمالی ڈکوٹا کے علاقے فورٹ رینسم میں واقع ہے،

لیکن مقامی لوگ آج تک اسے ایک عام پہاڑی ہی سمجھتے رہے۔ مقامی لوک داستانوں میں بتایا جاتا ہے کہ اس علاقے میں ہزاروں سال قبل اہرام کی تعمیر تواﺅ کانیان قبائل نے کی لیکن کسی کو معلوم نہیں تھا کہ پیرامڈ ہل نامی پہاڑی ہی دراصل وہ قدیم ہرم ہے جس کا لوک داستانوں میں ذکر ملتا ہے۔

ماہرین آثار قدیمہ کی ایک حالیہ تحقیق میں یہ دلچسپ انکشاف سامنے آیا ہے کہ یہ پہاڑی ہی دراصل ہزاروں قدیم ہرم ہے، جس کی تعمیر تقریباً 5 ہزار سے 9 ہزار سال قبل کی گئی۔ سائنسدانوں کے لئے سب سے حیران کن چیز وہ پتھر ثابت ہوا ہے جس پر ثبت کی گئی علامات جدید دور کی موسیقائی علامات اور مورس کوڈ جیسی ہیں۔ اس تحریر کا مطلب سمجھنے کی بہت کوششیں کی گئیں لیکن اس میں تاحال کامیابی نہیں ہوئی ہے۔ کچھ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ علامات اہرام کی تعمیر کرنے والوں کے نام ہیں جبکہ کچھ ایسے بھی ہیں جن کے خیال میں یہ ستاروں کے نقشے ہیں۔

رزق میں بے پناہ اضافے کیلئے روزانہ یہ آسان سا عمل کریں

انسان جلد مایوس ہوجاتاہے لیکن تمام دنیا وی مسائل کا حل اللہ تعالیٰ نے اپنی کلام پاک میں دے رکھا ہے . اگر شادی شدہ جوڑے کو بیٹے کی پیدائش کی خواہش ہوتو وہ سورۃ یٰسین کا ورد کریں اور اللہ تعالیٰ سے اپنے حق میں دعا مانگیں، قرآن مجید کا دل کہلانے والی یہ سورۃ مزید کن کن کاموں کیلئے پڑھی جاسکتی ہے .

حصول اولاد نرینہ:جس کے ہاں صرف لڑکیاں ہی پیا ہوتی ہوں اور وہ اولاد نرینہ کی خواہش رکھتا ہو تو اسے چاہیے کہ اپنے مقصد کے حصول کے لئے نماز کے بعد گیارہ مرتبہ یٰسین پڑھ کر رب تعالیٰ سے دعا مانگے اور جب جمعہ کی نماز ادا کرے تو مسجد میں بیٹھ کر گیارہ مرتبہ یٰسین کا ورد کرے اور پھر اولاد نرینہ کے لئے رب تعالیٰ کی بارگاہ میں دعا مانگے. حق تعالیٰ نے چاہا تو بہت جلد اس کی امید برآئے گی. رب تعالیٰ اسے اولاد نرینہ کی نعمت سے نوازے گا. سورہ یٰسین کی برکت سے اس کے گھر میں اس نعمت کے عطا ہوجانے سے خوشیوں کا دور دورہ ہوجائے گا.

ذہنی پریشانی سے نجات:ذہنی سکون حاصل کرنے کے لئے اور ذہنی پریشانی کے خاتمہ کے لئے نماز عشاءکے بعد اسی جگہ پر بیٹھ کر باوضو حالت میں گیارہ مرتبہ یٰسین پڑھے اور رب تعالیٰ سے ذہنی سکون حاصل کرنے کے لئے دعا مانگے تو مطلوبہ مقصد حل ہوجائے گا. ذہنی سکون کیلئے:اس مقصد کے لئے سات یوم تک سورہ یٰسین کا وظیفہ مندرجہ بالا طریقے سے کریں، اس کے بعد آپ محسوس کریں گے کہ ذہن کو سکون کی دولت حاصل ہوگئی ہے اور ہر قسم کی فکر و پریشانی ذہن سے دور ہوگئی ہے. وبا سے نجات:اگر کسی مقام پر کوئی اس قسم کی وبا پھیل گئی ہو،

جس کے علاج میں سخت دشواری اور مشکل پیش ہو یا پھر کسی مقام پر وبا کے پھیل جانے کا خطرہ ہو تو ایسی صورت میں مسجد میں یا کسی وصاف مقام پر اکٹھے ہوکر باوضو حالت میں ایک سو ایک مرتبہ یٰسین پڑھ کر رب تعالیٰ سے دعا مانگنے سے وبا کا خطرہ ٹل جاتا ہے اور اگر وبا پھیل چکی ہو تو اس سے نجات حاصل ہوجاتی ہے. باری تعالیٰ یٰسین کی برکت سے اس علاقے کو ہر قسم کی مہلک وبا سے محفوظ فرمادیتا ہے.امراض قلب سے نجات:امراض دل کے لئے یٰسین شریف کا پڑھنا اکسیر کی حیثیت رکھتا ہے

.دل کے امراض میں مبتلا افراد شفا حاص کرنے کے لئے گیارہ دن تک نماز فجر کے بعد تین مرتبہ یٰسین پڑھیں. ہر قسم کے دل کے مرض میں شفا حاصل ہوجائے گی. امراض کان سے نجات:کان میں شائیں شائیں اور شوروغل ہونے کی صورت میں ہر نماز کے بعد گیارہ مرتبہ سورہ یٰسین پڑھیں اور یٰسین کے بعد باری تعالیٰ سے دعا کریں تو حق تعالیٰ نے چاہا افاقہ ہوگا.مال و برکت ہو:مال و دولت میں برکت اور زیادتی کے خواہشمند اگر اس یٰسین کو ہر نماز کے بعد طاق اعداد کے مطابق پڑھیں تو حق تعالیٰ نے چاہا مال میں برکت پیدا ہوجائے گی.

میرے ساتھ کام کرنے والی خاتون کا کہنا ہے وہ حاملہ ہے، لیکن جیسے ہی میں نے اس کا یہ الٹراساؤنڈ دیکھا تو پتہ چل گیا جھوٹ بول رہی ہے کیونکہ اس میں۔۔۔‘ ایسی کیا چیز نظر آئی؟ خاتون نے ایسی بات کہہ دی کہ آپ سوچ بھی نہیں سکتے

اول تو یہ بات ہی سمجھ سے باہر ہے کہ کوئی خاتون حاملہ نہ ہونے کے باوجود کیوں خود کو حاملہ قرار دے گی. اور اگر کسی خاتون نے یہ افسوسناک جھوٹ بول ہی دیا ہے تو یہ بات اپنی جگہ حیران کن ہے کہ اس کے ساتھ کام کرنے والی کوئی اور خاتون خود کو اس فکر میں ہلکان کرتی رہی کہ وہ واقعی حاملہ ہے یا نہیں.

یہ عجیب و غریب کیس خواتین کی ویب سائٹ ’ممزنیٹ‘ پر سامنے آیا ہے، جہاں ایک خاتون نے اس بات پر سخت پریشانی کا اظہار کیا ہے کہ اس کے دفتر میں کام کرنے والی ایک خاتون نے خود کو جھوٹ موٹ کی حاملہ بنا رکھا ہے. اس خاتون کا یہ بھی کہنا ہے کہ اس نے ٹھوس شواہد حاصل کر لئے ہیں کہ اس کی ساتھی خاتون حاملہ نہیں ہے. بلاوجہ کی شدید پریشانی میں مبتلاءاس خاتون نے یہ ’سنگین مسئلہ‘ کچھ یوں بیان کیا ہے ” میرے ساتھ دفتر میں کام کرنے والی ایک خاتون نے حاملہ ہونے کا ڈرامہ کر رکھا ہے. اس نے یہ ڈرامہ کر کے دفتر کے کام میں رعایت حاصل کرلی ہے اور وہ وقتاً فوقتاً ہسپتال جانے کے لئے بھی چھٹی لے لیتی ہے. وہ خاتون مجھ سے سینئر ہے اور مجھے سمجھ نہیں آ رہی

کہ میں کس طرح اس کے جھوٹ کا پول کھولوں.  گزشتہ ہفتے میںنے اس کی الٹرا ساﺅنڈ رپورٹ دیکھی جو اس کے مطابق حمل کا تیسرا مہینہ پورا ہونے پر بنائی گئی تھی لیکن مجھے تو اس میں کوئی بچہ دکھائی نہیں دیا. میں نے اس سکین کو غور سے دیکھا تو مجھے اس پر 2015ءکی تاریخ لکھی ہوئی بھی نظر آ گئی.اب مجھے اس بات میں کوئی شک نہیں ہے کہ وہ حاملہ نہیں ہے. میں کبھی سوچتی ہوں کہ اپنے سینئر حکام کے سامنے یہ مسئلہ اُٹھاﺅں لیکن پھر مجھے خیال آتا ہے کہ خاموش ہی رہوں. شاید مجھے خاموش ہی رہنا چاہئیے کیونکہ بالآخر ساری حقیقت خود ہی سامنے آجائے گی.“

اس طریقے سے واک کرنے سے مردانہ کمزوری دور ہوجاتی ہے‘ سائنسدانوں نے مردوں کو سب سے بہترین طریقہ بتادیا

واک کرنا صحت کے لئے اچھا ہے لیکن تھوڑی سی تیز واک کر لی جائے تو مردانہ صحت کے لئے تو بہت ہی اچھا ہے.ماہرین صحت کہتے ہیں کہ آپ روزانہ دومیل کی تیز واک کر کے مردانہ کمزوری کا مسئلہ بآسانی حل کر سکتے ہیں.تیز واک کے دو طریقے ہیں، اول یہ کہ آپ تیز تیز قدم اٹھائیں اور دوم یہ کہ لمبے قدم اٹھائیں. اپنی واک میں ان دونوں طریقوں کو وقفے وقفے سے استعمال کریں تو اصل فائدہ حاصل ہوگا.

اور بھی کئی ایسی ورزشیں ہیں جو مردانہ کمزوری کے شکار افرادکے لئے بہت مفید ثابت ہو سکتی ہیں. مثانے کے پٹھوں کی ورزش ،جسے کیگل ورزش کہا جاتا ہے ،بھی بہت مؤثر پائی گئی ہے.ان پٹھوں کی ورزش مختلف طریقوں سے کی جاسکتی ہے. مثال کے طور پر آپ کمر کے بل سیدھے لیٹ جائے اور پھر اپنے پیر اور کندھے زمین پر رکھتے ہوئے باقی جسم کو اوپر اٹھائیں.جسم کو کچھ وقت کے لیے فضا میں رکھیں اور پھر آہستہ آہستہ واپس زمین پر لے آئیں. اسی طرح مثانے کے پٹھوں کو براہِ راست سکیڑنا اور پھیلانا بھی انہیں مضبوط کرنے کا بہترین طریقہ ہے.

اس ورزش کے لیے اپنے مثانے کے پٹھوں کو اندر کی جانب کھینچتے ہوئے سکیڑیں ،یوں جیسے آپ پیشاب روکنے کی کوشش کر رہے ہوں،اور کچھ دیر اسی حالت میں رکھنے کے بعد انہیں آہستہ آہستہ ڈھیلا چھوڑ دیں.اس عمل کو جتنی بار ممکن ہو دھرائیں. فزیکل فٹنس کے ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ ورزشیں باقاعدگی سے کریں تو مردانہ کمزوری کا خدشہ ہی نہیں رہتا اور اگر کسی کو کمزوری پہلے ہی لاحق ہو تو وہ کچھ ہی عرصے میں اس سے نجات پا سکتا ہے.

نوبیاہتا جوڑے کی اس حرکت نے حکومت کو ایکشن لینے پر مجبور کر دیا

شادی ہر انسان کی زندگی کا وہ موقعہ ہوتا ہے جب وہ بہت خوش ہوتا ہے ۔اور اس خوشی کا جشن منانا اپنا حق سمجھتا ہے ۔مگر ایک اچھے شہری کے ليۓ یہ ضروری ہے کہ وہ اپنے حق کا استعمال اس طرح کرے کہ اس سے کسی کو کوئي کلیف نہ ہو یا کسی کے جزبات مجروح نہ ہوں ۔

سعودی عرب کے شہر جدہ میں بھی ایک نو بیاہتا جوڑا اپنی شادی کے جشن کو منانے کےلیۓ ہاتھوں میں ہاتھ ڈالے سڑکوں پر نکل پڑا مگر اس بات کی اجازت وہاں کے قدامت پرست حلقوں میں قطعی نہیں ہے اس وجہ سے دیکھنے والوں نے سڑک پر ہی ان کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔اس کے ساتھ ساتھ اس جوڑے کی ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر بھی اپ لوڈ کردیں جس پر اس حوالے سے ٹوئٹر پر لوگوں کا الگ الگ ردعمل دیکھنے میں آیا ۔

کچھ لوگوں کا خیال تھا کہ یہ دولہا اپنے حواسوں میں نہیں جو اس طرح اپنی رلہن کو لے کر سڑکوں پر نکل آیا ہے

جب کہ کچھ سعودی باشندوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہمارا معاشرہ اور ہمارا مذہب اس قسم کے عمل کی کبھی بھی اجازت نہیں دیتا

کچھ کھلے دل کے لوگوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ عمل اگر سعودیہ کے علاوہ کسی اور ملک میں کیا جاتا تو لوگ اس عمل کو بہت خوبصورت سمجھتےایک صاحب نے یہ بھی کہا کہ اصل میں تو قانون کو نقصان پہنچانے والے وہ لوگ تھے جو کہ اس دولہا دلہن کو نہ صرف ہراساں کر دہے تھے بلکہ اس کے ساتھ ساتھ ان کی ویڈیو بنا کر ان کی آزادی میں مخل ہو رہے تھے۔

جب کہ سعودی حکومت کی جانب سے بھی اس ویڈیو پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوۓ کہا گیا ہے کہ سعودی حکومت ایسے کسی بھی عمل کی اجازت نہیں دے گی جو اسلامی قوانین ، اور سعودی رسوم و رواج سے متصادم ہو گا اس بارے میں سعودی قانون دان عبدالکریم الکادی کا یہ کہنا تھا کہ ‘اس جوڑے نے جو کام کیا ہے اس کی سزا ان کو ملنی چاہیۓ اگر ان کاتعلق سعودیہ سے ہو گا تو ان کو سزا کے طور پر قید کیا جا سکتا ہے اور اگر یہ کسی اور ملک کے شہری ہوۓ تو سزا کے طور پر ان کو ملک بدر بھی کیا جاسکتا ہے ‘

انسانی رشتوں کی ایسی عبرت انگیز داستان جس نے سب کے رونگٹھے کھڑے کر دیۓ

آدم  کو اللہ تعالی نے مٹی سے بنایا ہے ۔اس کے بعد اس ہی کی پسلی سے اللہ تعالی نے اس کے لیۓ حوا کو تخلیق کیا تاکہ وہ اس سے سکون حاصل کر سکے ۔عورت کی ذات کو اللہ نے سکون حاصل کرنے کا ایک ذریعہ قرار دیا ۔بزرگوں کا یہ کہنا ہے کہ نکاح کے تین بولوں کے ساتھ مرد اور عورت آپس میں محبت کی ڈور سے بندھ جاتے ہیں اور بچوں کی پیدائش کے بعد اس محبت میں مزید اضافہ ہو جاتا ہے مگر بعض اوقات انسان کی نظر سے ایسے بھی واقعات گزرتے ہیں جو کہ عقل و شعور کے تسلیم کرنے کے درجوں سے بالاتر ہوتے ہیں ۔

ایسا ہی ایک واقعہ کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی کے علاقے میں پیش آیا جہاں پر زینب نامی ایک خاتون نے ایک گھر کراۓ پر لیا ۔اس کے شوہر احمد اور اس کی بیٹی بھی اس کے ہمراہ تھے ۔ اس عورت کی بیٹی فرسٹ ائیر کی طالبہ تھی جو کہ اپنے خالہ ذاد زہیر کو پسند کرتی تھی ۔اس کے اس رشتے کے لیے اس کی ماں زینب تو راضی تھی مگر اس کا باپ اس رشتے کا شدید مخالف تھا ۔ جب کہ دوسری جانب زینب کے بھی اپنے دور پار کے رشتے دار رجب کے ساتھ تعلقات تھے ۔احمد بیٹی اور بیوی کی اس روش سے ناخوش رہتا تھا ،

اس نے ان دونوں کو پیار محبت سے سمجھانے کی کوشش کی مگر ان دونوں پر اس کا کوئی اثر نہ ہوا ۔ یہاں تک کہ اس کی بیٹی سونیا نے اپنے کزن زہیر کے ساتھ گھر سے بھاگنے کی بھی کوشش کی جس میں اس کو اپنی ماں کی بھی مدد حاصل تھی ۔مجبورا احمد نے گھر میں اپنی بیٹی کو زنجیروں سے باندھ کر رکھنا شروع کر دیا ان زنجیروں کی چابی وہ اپنے پاس ہی رکھتا تھا ۔ آخر کار زینب نے ایک ایسا منصوبہ بنایا جس کی مثال رہتی دنیا تک نہیں مل سکتی ۔ اس نے اپنے آشنا رجب اور اپنے بھانجے زہیر کے ساتھ مل کر احمد کو راہ سے ہٹانے کا فیصلہ کر لیا ۔

اس نے پہلے تو نشہ آور گولیاں کھلا کر احمد کو بے ہوش کیا ۔اس کے بعد اپنی بیٹی کو زنجیر سے آزاد کروا کر گھر سے باہر بھجوا دیا ۔اس کے بعد زہیر کے ساتھ مل کر اسی زنجیر سے گلا گونٹ کر احمد کو مار ڈالا  مار ڈالنے کے بعد لاش کو ٹھکانے لگانے کا مرحلہ تھا

اس کے لیۓ اس نے رجب کے ذریعے بازار سے قصائیوں والی چھری ، ٹوکا اور بڑے چولہے اور پتیلے منگواۓ ۔اس کے بعد ان تینوں شقی القلب لوگوں نے اس لاش کے 623 ٹکڑے کیۓ ۔ٹکڑے کرنے کے بعد ہلدی ڈال کر ان ٹکڑوں کو ہانڈی میں پکانے ڈال دیا تاکہ اس گوشت کو ٹھکانے لگا سکیں ۔جب انسانی گوشت کے ابلنے اور پکنے کی بدبو نے اہل محلہ کو پریشان کیا تو انہوں نے اس عورت سے استفار کیا ۔جس کا وہ کوئی مناسب جواب نہ دے سکی ۔مجبورا اہل محلہ نے پولیس والوں سے رابطہ کیا ۔جس پر پولیس نے اس عورت اور اس کے بھانجے زہیر کو لاش کے 62 ٹکڑوں کے ساتھ گرفتار کر لیا جب کہ رجب نامی شخص موقعے سے فرار ہونے میں ناکام ہوگیا۔

روزانہ 5اخروٹ کھانے کے ایسے فوائد کہ جان کر آپ اسے اپنی زندگی کا حصہ بنا لیں گے

ڈرائی فروٹ بہت صحت بخش غذا تصور کی جاتی ہے کیونکہ یہ غذائیت سے بھرپور ہوتے ہیں ، ان میں وٹامن ای،گڈ فیٹس اور اینٹی اوکسیڈینٹ وافر مقدار میں پائے جاتے ہیں.اگر آپ روزانہ 5 اخروٹ اپنی غذا میں شامل کرلیں تو اس کے فوائد سے آپ بھی حیران رہ جائیں گے.

اس سے کولیسٹرول کنٹرول میں رہتا ہے ٭ دماغی صحت کو بہتر بناتا ہے ٭ دل کےامراض سے بچاتا ہے ٭ ذیابطیس کا خطرہ ٹال دیتا ہے ٭ بال، جلد اور ناخن کےلیے بےحد مفید ہے ٭ کینسر سے بچاتا ہے پانچ اخروٹ کھانے کے 4 گھنٹے بعد دیکھیں کمال اخروٹ اپنا اثر بہت جلد دیکھاتا ہے . اگر آپ پانچ خروٹ کھائیں گے تو 4 گھنٹے بعد ہی اخروٹ اپنی کمالات دیکھانے شروع کردے گا، پانچ اخروٹ کھانے کے بعد آپ کے جسم کو غذائیت اور وٹامنز ملنا شروع ہوجائیں گےاور ان وٹامنز کے ذریعے آپ بہت فریش محسوس کریں گے.

اخروٹ کے ذریعے آپ اپنا ذہنی دباؤ بھی ختم کرسکتے ہیں چونکہ اخروٹ میں اینٹی اوکسیڈینٹ موجود ہوتے ہیں جوکہ آپ کے جسم میں موجود مختلف بیماریوں کے خلاف لڑتے ہیں جیسے دل کے امراض وغیرہ.اس کے علاوہ اس میں موجود اومیگا 3 فیٹی ایسیڈ کے ذریعے ذہنی دباؤ سے نجات ملتا ہے.