اپنے جنازے میں خود شرکت کرنے والی دنیا کی پہلی خاتون، یہ کیسے ممکن ہے؟ ایسی خبر آپ نے زندگی میں پہلے کبھی نہ پڑھی ہوگی

لوگ دوسروں کے جنازے میں تو شرکت کرتے ہیں لیکن ایک برطانوی بڑھیا نے اپنے ہی جنازے میں شرکت کا اہتمام کر لیا ہے۔ اخبار ’دی مرر‘ کے مطابق 93 سالہ خاتون ایتھل لیتھر کا کہنا ہے کہ وہ تقریبات میں شرکت کی بہت شوقین ہیں اور ان کی خواہش تھی کہ اپنی آخری رسوم میں بھی شرکت کریں۔ اپنی اس عجیب و غریب خواہش، اور اسے پورا کرنے کے لئے کیا طریقہ اپنایا،

اس کے بارے میں بات کرتے ہوئے ایتھل نے بتایا”میں یہ برداشت نہیں کرسکتی کہ اپنی آخری رسومات کی تقریب میں شرکت سے محروم رہوں۔،ا س لئے میں نے فیصلہ کیاکہ مرنے سے پہلے ہی اپنی آخری رسومات کی تقریب منعقد کرلوں۔ میں نے ایک مقامی کلب میں اس تقریب کے لئے بکنگ کروالی ہے اور دوستوں عزیزوں سے کہہ دیا ہے کہ میری آخری رسومات میرے مرنے سے پہلے ہی ہوں گی۔

میں اپنی بیٹی پالین، جس کی عمر 73 سال ہے، کے ساتھ چھٹیوں پر گئی ہوئی تھی جب میرے ذہن میں یہ آئیڈیا آیا اور میں نے اس پر عمل کرنے کا فیصلہ کر لیا۔اس موقع پر میں آخری رسومات کی تقریبات میں گایا جانے والا مشہور گیت ’میں یہ دنیا چھوڑ کر جارہی ہوں‘ بھی گاﺅں گی۔ میری آخری رسومات کی یہ تقریب تقریباً دو ہفتے بعد منعقد ہوگی۔ یہ ایک شاندا رپارٹی ہوگی جس میں خاندان کے 30سے زائد افراد اور کچھ دیگر دوست احباب شامل ہوں گے۔“

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *